Official Web

چین کا انسداد وبا میں سیاست سے گریز پر زور

جنیوا میں چینی مشن کے مستقل نمائندے چھن شو نے چوبیس تاریخ کو ڈبلیو ایچ او کے ڈائریکٹرجنرل  کے نام ایک  پیغام بھیجا۔ اپنے پیغام میںانہوں نے فورٹ ڈیٹریک بائیو لیب کے مشکوککردار اور نارتھ کیرولائنا یونیورسٹی میں کوروناوائرس کی تحقیقات کے حوالے سے دودستاویزات نیز  فورٹ ڈیٹریک بائیو لیب کیتحقیقات کے لیے 25 ملین سے زائد چینیشہریوں کا دستخط شدہ  ایک کھلا خط ارسال کیاہے۔ اس حوالے سے چینی وزارت خارجہ کےترجمان وانگ وین بین نے پچیس تاریخ کو نیوزبریفنگ میں کہا کہ عالمی سطح پر وبا سراغ کےمعاملے پر چین کا موقف ہمیشہ سے واضح ہے۔ وائرس ماخذ کا سراغ ایک سائنسی مسئلہہے ، اور چین ہمیشہ سائنسی سراغ کا حامیرہا ہے ۔ چین۔ڈبلیو ایچ او کی مشترکہ تحقیقیرپورٹ سے متعلق عالمی برادری اور سائنسیبرادری کے تسلیم شدہ نتائج اور سفارشات کااحترام اور ان پر عمل درآمد ہونا چاہیے۔مستقبل میں وائرس سراغ کے امور کو  صرفاسی بنیاد ہی سرانجام دینا چاہیے۔
ترجمان نے کہا کہ ڈبلیو ایچ او کے ماہرین دو مرتبہووہان انسٹی ٹیوٹ آف وائرولوجی کا دورہ کر چکےہیں ۔ایسا کوئی امکان نہیں ہے کہ نوول  کوروناوائرس ووہان انسٹی ٹیوٹ آف وائرولوجی سے لیک ہوا ہے ۔ یہ  چین۔ڈبلیو ایچ او کی مشترکہتحقیقی رپورٹ کا متفقہ نتیجہ ہے ۔ اگر متعلقہ فریقاصرار کرتے ہیں کہ لیبارٹری لیک کو خارج ازامکان نہیں قرار دیا جا سکتا تو امریکہ میں فورٹڈیٹریک بیس اور یونیورسٹی آف نارتھ کیرولائنا کوبھی منصفانہ طور پر شامل تفتیش کیا جائے۔ 

%d bloggers like this: