Official Web

بجٹ میں گاڑیوں پر ٹیکس چھوٹ، 850 سی سی تک گاڑیاں سستی ہوجائیں گی

وفاقی حکومت نے آئندہ مالی سال  2021-22  کے بجٹ میں مقامی طور پر تیار ہونے والی گاڑیوں پر سیلز ٹیکس میں کمی کا اعلان کیا ہے۔

وفاقی وزیر خزانہ شوکت ترین کی جانب سے قومی اسمبلی میں بجٹ پیش کیا گیا جس میں انہوں نے بتایا کہ درآمد شدہ 850 سی سی تک کی گاڑیوں پر کسٹم اور ریگولیٹری ڈیوٹی پر چھوٹ دی جارہی ہے۔

انہوں نے بتایا کہ پہلے سے بننے والی گاڑیوں اور نئے ماڈل بنانے والوں کو ایڈوانس کسٹم ڈیوٹی سے استثنیٰ دیا جارہا ہے۔

وفاقی وزیر خزانہ کا کہنا تھاکہ مقامی تیار کردہ 850 سی سی تک کی گاڑیوں پر فیڈرل ایکسائز ڈیوٹی میں چھوٹ اورسیلز ٹیکس میں کمی کی جا رہی ہے۔

ان کا کہنا تھاکہ مقامی تیار گاڑیوں پر سیلز ٹیکس کی شرح 17 فیصد سے کم کرکے 12.5 فیصد کی جارہی ہے، مقامی تیار گاٰڑیوں پر ویلیو ایڈڈ ٹیکس ختم کیاجارہا ہے۔

شوکت ترین کا کہنا تھاکہ الیکٹرک گاڑیوں کیلئے سیلز ٹیکس کی شرح 17 سے کم کر کے ایک فیصد کرنے اور ایک سال تک کسٹم ڈیوٹی کم کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

بجٹ میں مقامی تیار ہیوی موٹرسائیکل، ٹرک اور ٹریکٹر کی مخصوص اقسام پر ٹیکسوں کی کمی کی تجویز پیش کی گئی ہے۔

%d bloggers like this: