Official Web

‎پاکستان ڈیٹا سیکیورٹی سے متعلق عالمی اقدام پر چین کے ساتھ کھڑا ہے، حکام

سلام آباد() پاکستان بیجنگ  کے  ڈیٹا سیکیورٹی سے متعلق عالمی اقدام کے  اعلان  کے بعد  آئرن برادر چین کے ساتھ مضبوطی سےکھڑا ہے ، گوادر پرو نے سرکاری ذرائع کے حوالے سے بتایا  کہ  چین نے  گزشتہ  ہفتے اعلان کیا تھا کہہم خیال لوگوں کا مقابلہ کرتےہوئے چینی ٹیکنالوجی سے ہم خیال ممالک کواپنے نیٹ ورک کو بہتر بنانےپر راضی کرنے کے لئے وہ   ڈیٹا سیکیورٹی کے عالمیمعیارات مرتب کرنے کے لئے اپنے کام کا آ غاز کررہا ہے  ۔چین کے وزیر خارجہ وانگ  ای نے عالمی ڈیجیٹل گورننس سے متعلقبیجنگ سیمینار میں اس اقدام کا اعلان کرتے ہوئے  ڈیٹا سیکیورٹی کے بڑھتے ہوئے خطرات کی نشاندہی کی اور کہا کہ یہ اقدامات اسطرح کے چیلنجوں کا مقابلہ کرنے کے لئے سیکیورٹی  اور سیاسی معاملات سے متعلق ہیں ۔  انہوں نے کہا   ڈیٹا سیکیورٹی  بارے  بین الاقوامی قوانین کا ایک سیٹ تیار کرنا ضروری ہے جو اس عزم کی عکاسی  اور تمام ممالک کے مفادات کا احترام کرے۔بیجنگکا اقدام واشنگٹن اوور کے معاملات میں تجارت اور ٹیکنالوجی مسابقت سمیت سخت کشیدگی کے درمیان آیا ہے۔ پاکستان نے 8 ستمبر کو چین کے ڈیٹا سیکیورٹی پر عالمی اقدام کے اعلان کا خیرمقدم کیا۔ عہدیداروں نے کہا کہ عالمی اقدام ،   ڈیٹا سیکیورٹی کے لئےایک جامع نقطہ نظر کی حمایت کرتا ہے اور متعدد اہم امور کی نشاندہی کرتا ہے جن پر اقوام متحدہ اور دیگر کثیر الجہتی شعبے میں بڑےپیمانے پر غور کیا جارہا ہے ، اور جس پر اس وقت معمول سازی کا عمل جاری ہے۔ حالیہ مہینوں میں ، ڈونلڈ ٹرمپ انتظامیہ نےہواوے ٹیکنالوجیز کمپنی جیسی چینی ٹیک کمپنیوں اور بائٹ ڈانس لمیٹڈ کے ٹِک ٹِک اور ٹینسنٹ ہولڈنگز لمیٹڈ کے وی چیٹ سمیتمشہور چینی ایپ کیقومی سلامتی کے خطراتکے طور پر بیان کی گئی باتوں کو روکنے کے لئے اقدامات کیے ہیں۔ اس دورانچینی حکام نے الزام عائد کیا ہے کہ اس نے دوہرا معیار مسلط کیا ہے اور چینی کاروباری اداروں کو وسعت دینے کی کوششوں کوسبوتاژ کرنے کی کوشش کی ہے۔سائبر اسپیس ، آئی سی ٹی ، اور تکنیکی ترقی ، معاشی ترقی ، اور قومی سلامتی کے مفادات کے لئےمتوازن طرز عمل کو یقینی بنانے کے لئے پاکستان نے بات چیت اور بین الاقوامی تعاون کی ضرورت پر زور دیا ہے۔200 ملین سےزیادہ افراد کی آبادی اور ترقی پذیر ڈیجیٹل زمین کی تزئین کی آن لائن صارفین کی بڑھتی ہوئی تعداد  کے ساتھ عہدیداروں نے کہا    پاکستان معاشرتی اور معاشی ترقی کو قابل بنانے اور زیادہ موثر اور موثر نظم و نسق اور عوامی خدمت کی سہولت کے لیے  ڈیجیٹلٹیکنالوجی سے  فائدہ اٹھانے کو بہت اہمیت دیتا ہے۔ پاکستان کی وزارت خارجہ نے بتایا  کہ ڈیجیٹل تقسیم کو ختم کرنے کے لئےآئی سی ٹی اور سائبر سکیورٹی میں بین الاقوامی تعاون کو فروغ دینے کے لئے پرعزم ہے۔ اس میں مزید کہا گیا کہ ڈیجیٹل معیشت پرقابو پانے والے قوانین کی ترقی اور سائبر اسپیس اور آئی سی ٹی کی حفاظت میں تمام ممالک برابر کے شریک ہیں۔