Official Web

پہلے ہم بڑی طاقتوں کے سامنے جھکتے تھے، اب ایسا نہیں ہوگا: وزیراعظم عمران خان

اسلام آباد: وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ اسلامی ریاست کا مطلب کسی کے سامنے جھکنا نہیں ہوتا، ہم خوددارقوم بنیں گے، پہلے ہم بڑی طاقتوں کے سامنے جھکتے تھے اب ایسا نہیں ہو گا۔

ان خیالات کا اظہار وزیراعظم نے اسلام آباد میں ڈیجیٹیل میڈیا ڈویلپمنٹ پروگرام کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ تقریب میں وفاقی وزیر اطلاعات فواد چودھری سمیت دیگر نے بھی شرکت کی۔

عمران خان نے کہا کہ اللہ نے انسان کو اشرف المخلوقات بنایا، اللہ آپ کواتنا ہی دے گا جتنی آپ محنت کریں گے، محنت کرنے والا شخص ہی آگے نکلتا ہے۔ ہمیشہ بڑے اہداف کے حصول کے لیے کوشاں رہیں۔ کبھی خود کو کمتر نہ سمجھیں۔ اپنے برے وقت سے سیکھنا اور کبھی ہار نہیں ماننی۔

ان کا کہنا تھا کہ اپنی سوچ کوبڑا کرنا ہے، بڑی سوچ والا شخص ہی بڑا انسان بنتا ہے۔ نوجوان ملک کا مستقبل ہیں، قائداعظم، نیلسن منڈیلا نے اپنی ذات کے لیے سیاست نہیں کی تھی، لوگ ہمیشہ قائداعظم، منڈیلا کویاد رکھیں گے۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان نے مثالی اسلامی فلاحی ریاست بننا تھا، اسلامی ریاست کا مطلب کسی کے سامنے جھکنا نہیں ہوتا، ہم خوددارقوم بنیں گے، پہلے بڑی پاورکے سامنے ہم جھکے ہوتے تھے اب ایسا نہیں ہوگا۔

عمران خان کا کہنا تھا کہ میرا کوئی رشتہ داربڑے عہدوں پر نہیں ہے، میرٹ کے علاوہ معاشرہ آگے نہیں بڑھ سکتا، 3 سالوں سے شورمچا ہوا ہے، ہماری حکومت کہہ رہی ہے جس نے چوری کی جواب دیں، اس لیے باہربیٹھ کرشورمچارہے ہیں۔ طاقتور کو قانون کے نیچے لانا ہے، بڑے لوگ چوری کرتے تھے انہیں کوئی پوچھنے والا نہیں تھا، تین سالوں سے شورمچا ہوا ہے، طاقت ورکوقانون کے نیچے آنا ہوگا۔ طاقت ورکہہ رہے کہ ہمیں این آراودے کرمعاف کردو۔ یہ نہیں ہوسکتا کہ امیراورغریب کے لیے الگ الگ قانون ہو۔

ان کا کہنا تھا کہ ہماری حکومت کرپشن نہیں کررہی تو ہمیں آزاد عدلیہ سمیت میڈیا سے کوئی مسئلہ نہیں، 70 فیصد ہمارے خلاف پروگرام کیے گئے۔ چیلنج کرتا ہوں ہماری حکومت کے علاوہ کسی حکومت میں اتنا میڈیا آزاد نہیں تھا۔

وزیراعظم کا کہنا تھا کہ امریکا جیسے ملک میں پاکستان جیسی ہیلتھ انشورنس نہیں، ہیلتھ کارڈ غریب گھرانے کے لیے بہت بڑی نعمت ہے، مزدورسڑکوں پرسوتے تھے ان کے لیے پناہ گاہیں بنائیں، عام آدمی کے لیے گھربنارہے ہیں، یہ اسلامی فلاحی ریاست کا سفرہے جوبہت پہلے شروع ہونا چاہیے تھا۔

%d bloggers like this: