Official Web

پی ڈی ایم کسی کے ساتھ مذاکرات نہیں کر رہی , مولانا فضل الرحمان

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) سربراہ پاکستان ڈیمو کریٹک موومنٹ مولانا فضل الرحمان نے کہا ہے کہ پی ڈی ایم حکومت یا اسٹیبلشمنٹ کسی کے ساتھ مذاکرات نہیں (باقی صفحہ7بقیہ نمبر66) کر رہی ،ہمارے ساتھ اگر کوئی بات کرنا چاہتا ہے تو ہمارے مطالبات پورے کر کے آئی، دونوں رہنمائوں کا طریقہ کار مختلف ہو سکتا ہے لیکن مقصد ایک ہے – منگل کو سربراہ پاکستان ڈیمو کریٹک موومنٹ مولانا فضل الرحمان نے اپنے بیان میں کہا کہ پی ڈی ایم حکومت یا اسٹیبلشمنٹ کسی کے ساتھ مذاکرات نہیں کر رہی ہے اور ہمارے ساتھ اگر کوئی بات کرنا چاہتا ہے تو ہمارے مطالبات پورے کر کے آئے – فضل الرحمان نے کہا کہ اسمبلیوں میں تحریک عدم اعتماد کا آپشن پیپلز پارٹی کا ہے اور پیپلز پارٹی کو کہا ہے کہ وہ عدم اعتماد پر دیگر جماعتو کو اعتماد میں لے – انہوں نے کہا کہ سینیٹ الیکشن مشترکہ طورپر لڑنے کی تجویزہے جس پر بات چیت ہو رہی ہی، – مسلم لیگ (ن) کے قائد میاں نواز شریف اور پی ڈی ایم کے سربراہ مولانا فضل الرحمن کے درمیان ایک اور ٹیلی فونک رابطہ ہوا ہے جس میں یوم یکجہتی کشمیر کے موقع پر پانچ فروری کو پی ڈی ایم کا جلسہ راولپنڈی لیاقت باغ سے آزاد کشمیر کے دارالحکومت مظفر آباد منتقل کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے جبکہ نواز شریف نے بلاول بھٹو زرداری کی عدم اعتماد کی تحریک کی تجویز کی سخت مخالفت کی ہے اور کہا ہے کہ اس قسم کی تجاویز کا مقصد حکومت کو دوام بخشنا ہے اور ن لیگ اس کی کبھی حمایت نہیں کرے گی جس پر مولانا فضل الرحمن نے کہا کہ اس معاملے پر چار فروری کو پی ڈی ایم کے سربراہی اجلاس میں بات کریں گے اور چاہتے ہیں کہ تمام معاملات افہام وتفہیم سے آگے بڑھیں – ذرائع نے بتایا ہے کہ مولانا فضل الرحمان اور نوازشریف نے ٹیلی فونک رابطے کے دوران موجودہ سیاسی صورتحال پر بھی تبادلہ خیال کیا گیا جبکہ دونوں رہنمائوں نے بجلی اور پٹرول کی قیمتوں میں اضافے کی شدید الفاظ میں مذمت کی ہے اور اس عزم کا اظہار کیا ہے کہ ہر فوم پر حکومتی نا اہلی کو بے نقاب کیا جائیگا،مولانا فضل الرحمن پانچ فروری کو ہونے والے راولپنڈی لیاقت باغ میں جلسے کی آزاد کشمیر کے دارالحکومت مظفر آباد میں منتقلی کی تجویز پیش کی جس پر نواز شریف نے مکمل حمایت کرتے ہوئے تجویز کو سراہا – نوازشریف نے مولانا فضل الرحمن سے تحریک عدم اعتماد کی بلاول بھٹو کی تجویز پرشدید تحفظات کا اظہار کیا ہے اور کہا کہ اس معاملے پر تمام جماعتوں کو یکساں موأقف اختیار کرنا چاہیی، بطور پی ڈی ایم سربراہ آپ بلاول اور آصف زرداری سے بات کریں ،جس پر مولانا نے نواز شریف کو یقین دہانی کرائی ہے کہ معاملے کو افہام کے ساتھ حل کر لیا جائیگا ،چار فروری کو اجلاس بلایا ہے جس میں تمام آپشنز پر کھل کر بات کرینگے –