Official Web

چین میں جاری بین الاقوامی خدماتی تجارتی میلے کے دوران انسداد وبا کے لیے مشترکہ اقدامات پر اتفاق

چین میں جاری بین الاقوامی خدماتی تجارتی میلے کے دوران چھ  تاریخ کو ، بیجنگ میونسپل ہیلتھ کمیشن نے  چین میں عالمی ادارہ صحت کے نمائندہ دفتر اور دیگر متعلقہ اداروں کے ہمراہ  “بیجنگ انیشی ایٹو” جاری کیا ، جس میں عالمگیر وبائی خطرات کے خلاف مشترکہ جدوجہد پر زور دیا گیا ہے۔

بیجنگ انتظامیہ کے ڈپٹی سیکرٹری جنرل چن بی نے کہا کہ صحت عامہ کا تحفظ  تمام انسانوں کی صحت اور تحفظ سے وابستہ ایک اہم مسئلہ ہے  جو  براہ راست طور پر اقتصادی و سماجی ترقی سے جڑا ہوا ہے۔دنیا کی اجتماعی دانش اور مشترکہ اقدامات سے  وبا کی روک تھام و کنٹرول ممکن ہے لہذا عالمی سطح پر صحت عامہ کے شعبے میں تعاون کی خصوصی اہمیت ہے۔انہوں نے اس اعتماد کا اظہار کیا کہ تمام فریقوں کی مشترکہ کاوشوں اور دانش مندانہ اقدامات سے  انسانی صحت کے ہم نصیب  معاشرے کی تعمیر میں مدد ملے گی۔    کووڈ۔۱۹ کی وبائی صورتحال میں چین نے پوری انسانیت کے لیے ذمہ دارانہ رویہ اپناتے ہوئے ایک کٹھن جدوجہد سے انسداد وبا میں اہم اسٹڑیٹجک نتائج حاصل کیے ہیں. چین نے  عالمگیر  وبا کی روک تھام و کنٹرول کے لیے ہرممکن اقدامات کیے ہیں۔عالمی برادری کے خیال میں  چین نے اس وبا  کے خلاف جنگ میں نمایاں کامیابیاں حاصل کی ہیں اور  فعال طور پر  انسداد وبا کے بین الاقوامی تعاون میں شریک ہوا ہے جو  عالمی برادری کے لیے ایک بہترین مثال ہے۔انسداد وبا کے حوالے سے چین کے تجربات دنیا کے لئے بھی سودمند ثابت ہوئے ہیں۔

رواں برس فروری کے وسط میں چین میں انسداد وبا کے ایک مشکل دور میں ، پاکستانی سینٹ نے متفقہ طور پر ایک قرارداد منظور کی جس میں اس وبا کے خلاف چین کے اقدامات کی بھر پور حمایت کی گئی ۔ یہ قرارداد سینٹ میں خارجہ امور کمیٹی کے چیئرمین مشاہد حسین سید نے پیش کی تھی۔ حال ہی میں مشاہد حسین نے ایک مرتبہ پھر انسداد وبا میں چین کی حاصل شدہ کامیابیوں کو بھرپور سراہا۔ انہوں نے کہا کہ ہمیں انتہائی خوشی اور فخر ہے کہ چین نے وبا پر موثر طور پر قابو پایا ہے۔ اس سے چینی کمیونسٹ پارٹی کی موثر قیادت ، چین کے طبی نظام کی بہترین صلاحیت، اور چینی عوام کے اتحاد اور تعاون کی بہترین عکاسی ہوتی ہے۔