Official Web

آئی ایم ایف کا ڈور مور کا ایک اور مطالبہ منظور، گیس مزید مہنگی

اسلام آباد:  وزیر خزانہ محمد اورنگزیب کی زیرصدارت اقتصادی رابطہ کمیٹی کا اجلاس ہوا، ای سی سی اجلاس میں گیس کی قیمتوں میں اضافے کی منظوری دی گئی۔

وزارت توانائی کے ذرائع کے مطابق آئی ایم ایف شرط پر کیپٹو پاور پلانٹس کیلئے گیس مہنگی کرنے کی منظوری دی گئی، کیپٹو پاور پلانٹس کیلئے فی ایم ایم بی ٹی یو قیمت 2750 روپے سے بڑھ کر 3000 روپے ہو گی۔

وزارت خزانہ کے ذرائع نے مزید بتایا کہ ای سی سی نے گھریلو صارفین کے لئے گیس کی قیمت برقرار رکھنے کی منظوری دی ہے، گیس کی نئی قیمتوں کا اطلاق یکم جولائی 2024 سے ہوگا، کیپٹو کے سوا باقی انڈسٹری کے لئے بھی گیس قیمت برقرار رکھنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

ای سی سی نے اجلاس میں کیپٹو پاور کے لئے گیس ٹیرف 250 روپے فی ایم ایم بی ٹو بڑھانے کی منظوری دی گئی ہے، کیپٹو کے لیے گیس ٹیرف 2750 سے بڑھا کر3 ہزار روپے فی ایم ایم بی ٹی یو کرنے کی منظوری دی ہے۔

ذرائع کے مطابق ٹیکسٹائل سمیت جنرل انڈسٹری یا کیپٹو پاور پلانٹس کیلئے گیس ٹیرف 2750 روپے سے بڑھا کر 3000 فی ایم ایم بی ٹی یو کرنے کی منظوری دی گئی ہے۔

قیمتوں میں اضافے سے سوئی سدرن اور سوئی ناردرن گیس کمپنیز کو سالانہ 92 ارب روپے اضافی ریونیو ملے گا، آئی ایم ایف کے مطالبے پر جنرل انڈسٹری کیلئے جنوری 2025ء میں گیس مزید مہنگی کرنے کا بھی پلان زیر غور ہے۔