Official Web

وزیر اعظم یوتھ پروگرام کے چئیرمین رانا مشہود احمد خان کا دورہ چائنہ ونڈو

پشاور: وزیر اعظم یوتھ پروگرام کے چئیرمین،پنجاب کے سابق صوبائی وزیر اور ممتاز سیاست دان رانا مشہود احمد خان نے کہا ہے کہ پاکستان اور چین کی دوستی کسی بھی شک وشبہ سے بالاتر ہے لیکن عمران خان کے دور حکومت میں نہ صرف سی پیک منصوبے کو تباہی سے دوچار کیا گیا بلکہ دونوں ملکوں کے تعلقات بھی خراب کرنے کی کوشش کی گئی۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے پشاور میں قائم چینی ثقافتی مرکز چائنہ ونڈو کے دورے کے موقع میڈیا سے گفت گو اور قومی کمیشن برائے ٹیکنیکل اینڈ ووکیشنل ٹریننگ کے تحت تربیت حاصل کرنے والے ہنر مند طلباء سے خطاب میں کیا۔ رانا مشہود احمد خان نے چائنہ ونڈو کی مختلف گیلریاں دیکھیں، فرینڈ شپ وال پر دست خط کئے اور مہمانوں کی کتاب میں اپنے تاثرات درج کئے۔ ان کا کہنا تھا کہ وزیر اعظم محمد شہباز شریف پاکستان کو معاشی ترقی کا ہم سفر بنانا چاہتے ہیں اور یہی وجہ ہے کہ وہ پاکستان کے دوست ممالک سے سرمایہ کاری پاکستان لا رہے ہیں تاکہ وطن عزیز کو اپنے پاؤں پر کھڑا کیا جا سکے اس سلسلہ میں سی پیک کی اہمیت کو کسی طور نظر انداز نہیں کیا جا سکتا اس منصوبے کے تحت اب تک چین نے پاکستان میں 26 ارب ڈالرز کی سرمایہ کاری کی ہے جبکہ مجموعی سرمایہ کاری کا ہدف 65 ارب ڈالرز ہے۔انہوں نے کہا 14مئی سے وزیر اعظم عوامی جمہوریہ چین کا سرکاری دورہ کریں گے جس سے برادر ہمسایہ ملک کا اعتماد بحال ہو گا اور سی پیک منصوبہ تیزی سے کامیابی کی جانب گامزن ہو گا۔ایک سوال کے جواب میں رانا مشہود احمد خان نے کہا کہ موجودہ وفاقی حکومت کا فوکس یوتھ کی ترقی پر ہے۔اعلیٰ تعلیم کے ساتھ ساتھ وزیر اعظم شہباز شریف نے نوجوانوں کی ٹیکنیکل ٹریننگ بڑھانے کی ہدایت کی ہے تاکہ ہنر مند نوجوانوں کو نہ صرف بیرون ملک بھیجا جائے بلکہ ان کی صلاحیتوں سے پاکستان میں بھی بھرپور فائدہ اٹھایا جا سکے۔زبانوں کی اہمیت کا زکر کرتے ہوئے وزیر اعظم یوتھ پروگرام کے چئیرمین کا کہنا تھا کہ انہوں نے متعلقہ اداروں کو ہدایت کی ہے کہ مختلف ممالک کی ضروریات کو مدنظر رکھتے ہوئے مختلف زبانیں سکھانے کے پروگرام شروع کئے جائیں۔ ا س سلسلہ میں چینی زبان کو قومی کمیشن برائے ٹیکنیکل اینڈ ووکیشنل ٹریننگ کے پروگرامز میں شامل کرنے کا یقین دلایا۔رانا مشہود احمد خان نے مزید کہا کہ چین اور سعودی عرب سمیت کئی ممالک پاکستان میں سرمایہ کاری کا ارادہ رکھتے ہیں جبکہ مختلف شعبوں میں ہزاروں ہنر مندوں کو بھی ملک اور بیرون ملک خدمات کی انجام دہی کا موقع ملے گا۔ انہوں نے پشاور میں قائم چینی ثقافتی مرکز کے قیام کو سراہا اور کہا کہ یہ امر لائق ستائش ہے کہ چائنہ ونڈو پاکستان اور چین کے درمیان دوستی کے رشتے مزید مستحکم کرنے کا مرکز ثابت ہو گا۔انہوں وفاقی حکومت کی جانب سے چائنہ ونڈو کے منتظمین کو ہر ممکن تعاون کا بھی یقین دلایا۔