Official Web

مشرق وسطیٰ کے مسئلے پر چینی حکومت کے خصوصی ایلچی ژائی جون کی فلسطینی نائب وزیر خارجہ امل جیادو سے ٹیلی فون پر بات چیت

 چینی حکومت کے خصوصی ایلچی برائے مشرق وسطیٰ ژائی جون نے فلسطینی اول نائب وزیر خارجہ امل جیادو سے  فلسطین  اسرائیل تنازعہ کی  صورتحال پر ٹیلی فونک  بات چیت کی۔

 ژائی جون نے کہا کہ چین فلسطین اور اسرائیل کے درمیان جاری تنازعے کی شدت پر انتہائی رنجیدہ ہے ،جس کی وجہ سے بے گناہ شہریوں کی ہلاکتیں ہوئی ہیں اور فلسطین میں سلامتی اور  بگڑتی ہوئی انسانی صورتحال پر گہری تشویش کا اظہار کرتا ہے۔عام  شہریوں کی حفاظت کے لئے فوری جنگ بندی اشد ضروری ہے۔ عالمی برادری کو چاہیے کہ وہ مشترکہ طور پر صورتحال کی شدت  کو کم کرنے اور فلسطینی عوام کو انسانی امداد فراہم کرنے میں اپنا کردار موثر انداز میں ادا کرے۔

 انہوں نے کہا کہ فلسطین اسرائیل تنازعے  کو ختم کرنے کا راستہ دو ریاستی حل کی طرف لوٹنا، امن مذاکرات کا دوبارہ آغاز، ایک آزاد فلسطینی ریاست کا قیام اور پرامن فلسطین اسرائیل بقائے باہمی کا ادراک کرنا ہے۔ چین جنگ بندی کو فروغ دینے اور تشدد کو روکنے، انسانی بحران کو کم کرنے میں مدد کرنے، امن اور بات چیت کو فعال طور پر فروغ دینے اور مسئلہ فلسطین کے جامع، منصفانہ اور دیرپا حل کو فروغ دینے میں تعمیری کردار ادا کرتا رہے گا۔

امل جیادو  نے فلسطین کے مسئلے پر طویل مدتی منصفانہ موقف اور امن اور مذاکرات کو فروغ دینے کی فعال کوششوں پر چین کا شکریہ ادا کیا۔انہوں نے کہا کہ  اس وقت فلسطین میں انسانی صورتحال انتہائی سنگین ہے اور عالمی برادری کو اپنی ذمہ داریاں نبھانی چاہئیں، جنگ بندی کو فروغ دینا چاہیے اور تشدد روکنا چاہیے، امن مذاکرات دوبارہ شروع کرنے چاہئیں اور دو ریاستی حل کی بنیاد پر ایک آزاد فلسطینی ریاست کا قیام عمل میں لانا چاہیے۔ فلسطین چین پر اعتماد کرتا ہے اور امید کرتا ہے کہ چین موجودہ صورتحال میں تعمیری کردار ادا کرتا رہے گا۔