Official Web

وزارت تجارت کی طرف سے چین کی الیکٹرک گاڑیوں پر یورپی یونین کی تحقیقات کا جواب

ین کی وزارت تجارت کے ترجمان نے حال ہی میں  چین کی الیکٹرک گاڑیوں پر  یورپی یونین کی کاونٹر سبسڈیز تحقیقات کے بارے میں رپورٹر کے سوال کا جواب دیا۔ ایک رپورٹر نے پوچھاکہ  4 اکتوبر کو ، یورپی کمیشن نے ایک اعلان جاری کیا کہ اس نے چین سے درآمد کی جانے والی الیکٹرک  گاڑیوں کی کاؤنٹر سبسڈیز  تحقیقات شروع کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ چین کا اس بارے میں کیا تبصرہ ہے؟

چینی ترجمان نے  جواب دیتے ہوئے کہا کہ  یورپی یونین نے یہ  تحقیقات صرف نام نہاد سبسڈی آئٹمز اور نقصان کے خطرات کے بارے میں اپنی مفروضوں کی بنیاد پر شروع کی ہیں، لیکن اس لئے کوئی ٹھوس ثبوت نہیں ہیں، اور یہ ڈبلیو ٹی او کے متعلقہ قوانین کے خلاف ورزی بھی ہے. یورپی یونین کی جانب سے چین سے کہا گیا کہ وہ انتہائی کم  وقت میں مشاورت کرے اور موثر مشاورتی مواد فراہم  کرے،  جس سے چین کے  تجارتی حقوق کو شدید نقصان پہنچا ہے۔

ترجمان نے مزید کہا کہ  کچھ عرصہ قبل منعقد ہونے والے 10 ویں چین-یورپی یونین اقتصادی اور تجارتی اعلی سطحی مکالمے میں ، چین نے یہ واضح کیا تھا  کہ "منصفانہ تجارت” کے نام پر اپنی صنعت کے تحفظ کے لئے یورپی یونین کی طرف سے اٹھائے جانے والے تحقیقاتی اقدامات اصل میں تحفظ پسندانہ اقدامات ہیں ، جو یورپی یونین سمیت عالمی آٹوموٹو انڈسٹری چین اور سپلائی چین کو شدید طور پر متاثر کردیں گے ، اور چین – یورپی یونین کے اقتصادی اور تجارتی تعلقات پر منفی اثرات مرتب کریں گے۔ چین یورپی یونین پر زور دیتا ہے کہ وہ عالمی صنعتی چین اور سپلائی چین کے استحکام اور چین-یورپی یونین جامع اسٹریٹجک شراکت داری کے استحکام کو برقرار رکھنے کی  کوشش کرے، تجارتی امدادی اقدامات کو دانشمندانہ طور پر استعمال کرے، الیکٹرک گاڑیوں سمیت  نئی توانائی کی صنعت کے تعاون کو فروغ دے، اور چین-یورپی یونین کی الیکٹرک گاڑیوں کی صنعت کی مشترکہ ترقی کے لئے منصفانہ اور  غیر امتیازی  مارکیٹ کا  ماحول پیدا کرے. چین یورپی فریق کے فالو اپ تحقیقات کے طریقہ کار پر گہری توجہ دے گا اور چینی کاروباری اداروں کے جائز حقوق اور مفادات کا مضبوطی سے تحفظ کرے گا۔