Official Web

پرویز الہٰی کیخلاف جنگلات اراضی کیس کی تحقیقات دوبارہ شروع

سابق وزیر اعلیٰ پرویز الٰہی کے خلاف جنگلات اراضی کیس کی فائل دوبارہ کھل گئی۔

نیب نے اسلام آباد سمیت 15اضلاع کے ڈپٹی کمشنرز سے 25 ستمبر تک پرویز الٰہی سمیت 14 افراد کی منقولہ اور غیر منقولہ جائیدادوں کی خرید وفروخت کی تفصیلات طلب کی ہیں۔

نیب کال اپ نوٹس کے مطابق محکمہ جنگلات کی اراضی ایک نجی ٹاؤن کومنتقل کرنے کے کیس میں پرویز الٰہی پھر شکنجے میں آگئے ہیں۔

راولپنڈی کے نجی ٹاؤن مالکان اور لینڈ ريونیو افسران سمیت 14افراد کے  خلاف تحقیقات شروع کردی گئی ہیں۔

نیب کے مطابق پرویز  الٰہی پر راولپنڈی کے قریب تخت پری جنگل کی اراضی غیر قانونی طور نجی ٹاؤن کو منتقل کرنے کا الزام ہے، نیب نے ان افسران کے اثاثہ جات کی تفصیلات ڈپٹی کمشنرز اسلام آباد، لاہور، کراچی، گوادر، ملتان، راولپنڈی، کوئٹہ اور پشاور سے طلب کی ہیں ۔

اس کے علاوہ اٹک، شیخوپورہ، جہلم، میانوالی، پاکپتن، فیصل آباد اور ڈی سی گوجرانوالہ سے بھی تفصیلات طلب کی گئی ہیں۔

ان افسران میں جاوید مجید، غلام محمد سکندر، جہانگیر غوری، جمیل احمد، عرفان الٰہی، سید جمال مصطفیٰ، آصف قریشی، انوار الحق، شفقت علی مرزا، تصور حسین، محمد نواز، خالد مسعود اور عبد الظہور شامل ہیں۔

%d bloggers like this: