Official Web

امریکی سفیر کا گوادر کا دورہ، دو طرفہ تجارتی مواقع کا جائزہ لیا

امریکی سفیر ڈونلڈ بلوم نے پاک امریکا مستقل اور مضبوط شراکت داری کے تحت بلوچستان کے عوام کے ساتھ امریکا کے عزم کو اجاگر کرنے کیلئے گوادر کا دورہ کرتے ہوئے علاقائی ترقی، تجارت اور تجارتی تعلقات کومہمیز دینے کیلئے مواقع کا جائزہ لیا۔

اپنے دورے کے دوران سفیر بلوم نے سیاسی رہنماؤں، گوادر  ایوان صنعت و تجارت کے نمائندوں سمیت حکومتی اور نجی شعبے کے مختلف رہنماؤں سے ملاقات کی۔

اس موقع پر امریکی سفیر کا کہنا تھا کہ امریکا اور بلوچستان کے درمیان کامیاب تعلق کی طویل تاریخ ہے، گزشتہ سال آنے والے تباہ کن سیلاب کے بعد امریکا نے خوراک اور اشد ضروری رقم کے ذریعے 6 لاکھ 61 ہزارافراد کی اعانت کی اور 90 ہزار بچوں کو بھوک کے خطرے سے نمٹنے کیلئے کھانا فراہم کیا۔

انہوں نے کہا کہ گزشتہ سال کے دوران بلوچستان میں امریکی اعانت سے 41 مراکز صحت کی کامیابی سے تجدید کی گئی جبکہ تعلیم کے میدان میں امریکی اعانت سے بی یو آئی ٹی ای ایم ایس اور سردار بہادر خان ویمن یونیورسٹی میں پروگراموں کو بھی فروغ دیا گیا۔

ڈونلڈ بلوم کا کہنا تھا کہ امریکی تعاون سے بلوچی اور مختلف دوسری زبانوں کی تدریس اور تعلیمی مواد کو ترقی دے کر آئندہ نسل کے نوجوانوں کو بااختیار بنانے کیلئے بھی کوششیں کی گئیں۔

سیاسی رہنماؤں سے اپنی ملاقات میں امریکی سفیر نے بلوچستان کی ترقی کیلئے معاشی نمو، آفات سے متعلق تیاری و مدد اور سکیورٹی سمیت دوطرفہ تجارت اور سرمایہ کاری کے حوالے سے امریکی اعانت کا اعادہ کیا۔

اس موقع پر انہوں نے ایسے اقدامات کا بھی ذکرکیا جن کے ذریعے پاکستان سرمایہ کاری کیلئے اپنے یہاں ماحول کو بہتر بنا سکتا ہے۔

گوادر کے ایوان صنعت و تجارت کے وفد سے ملاقات میں سفیر ڈونلڈ بلوم نے خطے میں کاروبار، نقل و حمل، سیاحت، ماہی گیری اور سمندر سے متعلقہ معاشی شعبوں میں امریکی تجارت اور سرمایہ کاری کو فروغ دینے کے مواقع پر بات چیت کی۔

امریکی سفیر سے ملاقات کے دوران ایوان صنعت و تجارت کے وفد نے انہیں بتایا کہ کس طرح پاکستان کی قیادت میں تمام گروہوں کی شمولیت سے کاروباری تعلقات کو فروغ دے کر بلوچستان بھر میں روزگار میں اضافہ کیا جاسکتا ہے اور کس طرح کاروباری تعلقات کو وسعت دے کر بلوچستان میں تکنیکی مہارتوں میں اضافے اور دوطرفہ تجارت کوفروغ دیا جا سکتا ہے۔

حکومتی اور کاروباری رہنماؤں سے اپنی ملاقاتوں میں سفیر ڈونلڈ بلوم نے پاک امریکا سبز اتحاد فریم ورک پر بھی بات کی جو کہ دونوں ملکوں کو مل کر ماحول، توانائی، پانی اور معاشی ضروریات کو پورا کرنے میں مدد دے رہا ہے۔

انہوں نے کہا کہ ہم خاص طور پر بلوچستان سمیت سارے پاکستان کو ماحولیاتی مسائل سے نمٹنے کی استعداد بڑھانے، متبادل توانائی اور یکساں معاشی ترقی کو فروغ دینے میں اعانت فراہم کررہے ہیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ سبز اتحاد کے تحت 12 ہزار کسانوں کو امریکی اعانت فراہم کی گئی، جن میں سے زیادہ تر کا تعلق بلوچستان سے ہے اور 2 ہزار ایکڑ پر بہتر ٹیکنالوجی اور انتظامی طریقوں کو بروئے کار لاکر پیداور میں اضافہ اور نقصانات میں کمی لائی گئی۔

امریکی سفیر نے گوادر کی بندرگاہ کا دورہ کیا جہاں پورٹ اتھارٹی کے چیئرمین پسند خان بلیدی سے ملاقات کرکے بندرگاہ کے آپریشنز، ترقیاتی منصوبوں اور گوادر کے علاقائی تجارتی مرکز بننے کی استعداد اور اسے پاکستانی برآمدات کی سب سے بڑی منڈی امریکا سے منسلک کرنے کے طریقوں پر بھی بات چیت کی۔

پاکستان نیوی کی مغربی کمانڈ سے ملاقات میں سفیر ڈونلڈ بلوم نےعلاقائی امور پر تبادلہ خیال کیا اور آنے والے سالوں میں شراکت داری جاری رکھنے پر زور دیا۔

%d bloggers like this: