Official Web

اداکارہ نادیہ جمیل رضوانہ سے ملاقات کیلئے اسپتال پہنچ گئیں

لاہور: پاکستان شوبز کی سینئر اداکارہ اور سوشل ایکٹوسٹ نادیہ جمیل رضوانہ سے ملاقات کے دوران آبدیدہ ہوگئیں۔

نادیہ جمیل سول جج کی اہلیہ کے ہاتھوں وحشیانہ تشدد کا نشانہ بننے والی 13 سالہ رضوانہ سے ملاقات کیلئے پہنچیں اُنہوں نے بچی کی حالت دیکھ کر شدید افسوس کا اظہار کیا اور سوشل میڈیا پر ملاقات کا احوال بتایا۔

اداکارہ نے سوشل میڈیا پوسٹ میں بتایا کہ انہوں نے رضوانہ سے ملاقات کی اور اس کی حالت دیکھ کر ان کا دل ریزہ ریزہ ہوگیا۔

اداکارہ نے اپنی پوسٹ میں لکھا کہ ’وہ بہت درد میں تھی اور اُسے بری طرح سے مارا پیٹا اور زخمی کیا گیا تھا اس کے سر میں بے حد درد ہو رہا تھا۔ تاہم جب ہم نے اس سے پوچھا کہ اُسے کیا چاہیے تو اس نے پیاری سے مسکراہٹ کے ساتھ جواب دیا گُڑیا۔‘

نادیہ جمیل نے رضوانہ سے سوال کیا وہ گڑیا کا کیا نام رکھے گی اُس نے کہا ڈولی۔ رضوانہ نے نادیہ کو بتایا کہ اُسے بہت بُری طرح مارا گیا ہے جس پر اداکارہ آبدیدہ ہوگئیں۔

نادیہ جمیل نے کہا کہ رضوانہ ایک چھوٹی سے بچی ہے اور جب وہ اپنے اردگرد امیر بچوں کو کھیلونوں سے کھیلتا دیکھتی ہوگی تو اس کا بھی دل کرتا ہوگا کہ وہ کھیلے مسکرائے۔ اداکارہ نے اپنی مہم جسٹس فار رضوانہ کیلئے عوام سے درخواست کی کہ رضوانہ کی مسکراہٹ کی حفاظت کریں۔

خیال رہے کہ سرگودھا سے تعلق رکھنے والی 13 سالہ گھریلو ملازمہ رضوانہ پر سول جج کی اہلیہ نے شدید تشدد کیا تھا جس کے بعد اس کی حالت غیر ہوگئی تھی۔