Official Web

حکومت نے 15 ماہ میں غریب سے جینے کا حق بھی چھین لیا: شیخ رشید

راولپنڈی:  سربراہ عوامی مسلم لیگ اور سابق وفاقی وزیر داخلہ شیخ رشید احمد نے کہا ہے کہ حکومت نے 15 مہینوں میں آئین اور قانون کا حلیہ ہی نہیں بگاڑا بلکہ غریب سے جینے کا حق بھی چھین لیا ہے۔

سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر شیخ رشید احمد نے اپنے پیغام میں لکھا کہ 23 دن کی حکومت نے 23 کروڑ لوگوں پر 50 روپے فی بنیادی یونٹ بجلی کی قیمت بڑھا کر جاتے جاتے 440 وولٹ کا کرنٹ لگا دیا جس کی تنخواہ 35 سے 50 ہزار روپے ہے وہ 15 سے 20 ہزار روپے بجلی کا بل کہاں سے دے گا۔

انہوں نے کہا کہ بجلی، گیس، آٹا، چینی غریب کی دسترس سے باہر ہوگئے، موجودہ حکومت نے 15 مہینوں میں ہر وہ کام کیا جس سے ریلیف کے بجائے لوگوں کو تکلیف پہنچے، چادر اور چاردیواری کو روند ڈالا، بچوں اور خواتین کو گھروں سے اٹھایا، بے گناہوں کو جیلوں میں ڈالا، بربریت چنگیزیت اور انتقام کی سیاست کا یہ بدترین دور تھا، حکومت کے باقی ماندہ 20 دن نت نئی خبروں کو جنم دیں گے۔

سابق وفاقی وزیر کا کہنا تھا کہ پی ڈی ایم کا شیرازہ بکھرے گا جب اپنے اپنے انتخابی الیکشن پر لڑیں گے تو انہیں لگ پتہ جائے گا، ہر حکومت یہی کہتی ہے کہ اُن کے پاس الہ دین کا چراغ نہیں جب 85 رکنی کابینہ ہوگی اربوں روپے کی نئی گاڑیاں لی جائیں گی 50 سے زائد غیر ملکی بےکار دورے کیے جائیں گے تو سارا بوجھ عوام پر پڑے گا۔

سربراہ عوامی مسلم لیگ نے مزید کہا کہ حکومت کے جانے کے تو دن گنے جا چکے ہیں لیکن نگران حکومت کے آنے اور جانے کا ابھی فیصلہ ہونا باقی ہے، جاتے جاتے آزادی صحافت کو بھی ہتھکڑیاں پہنا دی گئیں۔